Urdu

نیب نے آمدن سے زائد اثاثوں کےکیس میں گرفتارخواجہ آصف کیخلاف ریفرنس تیار کر لیا

اسلام آباد: نیب نے آمدن سے زائد اثاثوں کےکیس میں گرفتارخواجہ آصف کیخلاف ریفرنس تیار کر لیا ہے جس کے متن کے مطابق خواجہ آصف پرمنی لانڈرنگ،آمدن سےزائداثاثے بنانے کا الزام ہے۔

یاد رہے کہ چیئرمین نیب نے 4 ستمبر 2018کوخواجہ آصف کیخلاف انکوائری کی منظوری دی تھی۔ ریفرنس کے متن کے مطابق خواجہ آصف کو 29دسمبر 2020کوگرفتار کیا گیا،کیس کی تحقیقات جاری ہیں، ریفرنس میں انکشاف کیا گیا ہے کہ خواجہ آصف جب 1991میں سینیٹر بنے تو انکے پاس 3 ہزار مربع گز کا گھر تھا، 1993ء میں خواجہ آصف کے کل اثاثے 51 لاکھ روپے کے تھے، پبلک آفس ہولڈ کرنے کے بعد 2018ء تک خواجہ آصف کے کل اثاثے 404 ملین روپے تک پہنچ گئے، خواجہ آصف نے 1987ء سے 2018ء تک 21 کروڑ 3 لاکھ 93 ہزار کی آمدن حاصل کی، ریفرنس متن کے مطابق 1987ء سے 2018ء کے دوران خواجہ آصف نے 43 کروڑ 94 لاکھ 62 ہزار روپے کے اخراجات ظاہر کئے، 1987ء سے 2018 تک خواجہ آصف نے تنخواہ کی مد میں 2 کروڑ 97 لاکھ 17 ہزار روپے وصول کئے، 1987ء سے 2018 تک خواجہ آصف نے کاروبار سے 8 کروڑ 21 لاکھ 86 ہزار کی آمدن وصول کی، خواجہ آصف کی اہلیہ نے تنخواہ کی مد میں 1 کروڑ 7 لاکھ 92 ہزار روپے 1987ء سے 2018ء کے دوران وصول کئے، خواجہ آصف نے اپنے اہلخانہ کے نام پر مختلف جائیدادیں بنائیں اور سرمایہ کاری کی، متن کے مطابق خواجہ آصف نے اپنی آمدن کا مرکزی ذریعہ دبئی کی ایمکو کمپنی کو قرار دیا، اور دبئی کی ایمکو کمپنی سے تنخواہ منتقلی کا کوئی ثبوت فراہم نہیں کیا گیا، متن میں یہ بھی بتایا گیا ہے کہ خواجہ آصف نے دبئی کی ایمکو کمپنی کی ملی بھگت سے اقامہ بنوایا، میسرز ایمکو کے ایم ڈی الیاس صلوم کو طلب کیا گیا مگر وہ شامل تفتیش نہیں ہوا، ملزم خواجہ آصف نے منی لانڈرنگ کے الزامات کا بھی کوئی جواب نہیں دیا، چیئرمین نیب کی حتمی منظوری کے بعد ریفرنس احتساب عدالت میں دائر کیا جائے گا

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button
Close
Close