Urdu

پھالیہ کے نوجوان یورپ جانے کے چکر میں موت کے منہ میں چلے گئے

گجرات: انسانی سمگلر نے ایران کے راستے ترکی لے جاتے ہوئے ایک ہی خاندان کے تین نوجوان کو موت کی وادی میں دھکیل دیا،۔ آنکھوں میں سنہرے خواب سجا کر ترکی جانے والے ایک ہی خاندان کے تین نوجوان کی میتیں پھالیہ کے نواحی گاؤں ھیلاں پہنچ گئیں، تینوں نوجوانوں کو ہزاروں افراد کی موجودگی میں ھیلاں کے مقامی قبرستان میں سپردِ خاک کر دیا گیا۔

پھالیہ کے نواحی گاؤں ھیلاں کے رہائشی تین سگے بھائیوں نے اپنے تین بیٹوں 19 سالہ طیب، 17 سالہ ذیشان اور 20 سالہ عمیر عبداللہ کو غیر قانونی راستے ترکی پہچانے کے لیے انسانی سمگلر کے حوالے کیا مگر 16 جون کو بدقسمت خاندان کو بذریعہ ایمبیسی اطلاع دی گئی کہ ان کے لخت جگر اس دنیا میں نہیں رہے، یہ بھی نہ بتایا گیا کہ ان کی موت کیسے واقع یوئی ، تینوں نوجوان کی میتیں پاکستان منگوانے کے لیے غریب خاندان پر مزید تین لاکھ کا بوجھ بھی ڈال دیا گیا، تینوں نوجوانوں 17 سالہ ذیشان، 19 سالہ طیب ریاض اور 20 سالہ عمیر عبداللہ کی میتیں ھیلاں گاؤں پہنچنے پر پورا گاؤں غم میں ڈوبا ہوا تھا، تینوں نوجوانوں کی نماز جنازہ کے بعد ھیلاں کے قبرستان میں تدفین کردی گئی،نماز جنازہ میں شامل ہر شہری کی آنکھ بدقسمت خاندان کی بے بسی پر اشکبار تھی+3LikeCommentShare

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button
Close
Close