Urdu

سندھ لاک ڈاون میں سب بند لیکن جیکب آباد کی نہر کے لیے 60 کروڑ کا ٹینڈر جاری، حکومت سے جواب طلب

فائل فوٹو

کراچی: لاک ڈاون کے دوران سندھ حکومت کی جانب سے جیکب آباد کی نہر کے لیے 60 کروڑ روپے کا ٹینڈر جاری کرنے کا اقدام سندھ ہائ کورٹ میں چیلنج کردیا گیا۔ سندھ ہائیکورٹ نے رکن صوبائی اسمبلی محفوظ یار خان کی درخواست پر صوبائی حکومت سے جواب طلب کرلیا اور چیف سیکریٹری سندھ، سیکریٹری زراعت اور دیگر کو 11 مئی کو جواب جمع کرانے کا حکم دے دیا۔ درخواست گذار کے وکیل بیرسٹر اسامہ طارق کے مطابق 22 اپریل کو کورونا وائرس کی وبا کے باعث سندھ حکومت نے صوبے بھر میں لاک ڈاؤن کا اعلان کیا اور اس دوران سرکاری اور پرائیویٹ اداروں کو مکمل طور پر بند رکھنے کا نوٹیفکیشن جاری کیا گیا، انٹر سٹی بس سروس بند کردی گئی، لوگوں کو گھروں سے باہر نکلنے پر مکمل پابندی عائد کی گئی تاہم لاک ڈاؤن کے دوران مکمہ زراعت سندھ نے من پسند افراد کو نوازنے کے لیے 60 کروڑ روپے کا ٹینڈر جیکب آباد نہر کے بند باندھنے کے لیےجاری کردیا ۔ ان کا موقف تھا کہ حکومت نے کورونا وائرس کے پیش نظر جب سب کچھ بند کررکھا ہے تو ٹینڈر کیسے جاری ہوگیا، ۔ انہوں نے استدعا کی کہ پیپلزپارٹی حکومت نے من پسند افراد کو نوازنے کے لیے ٹینڈر جاری کیا، غیر قانونی قرار دیا جائے۔

Related Articles

Back to top button
Close
Close