Urdu

کراچی میں انسداد تجاوزات فورس کا ہائی پروفائل لینڈ گریبرز کے خلاف تابڑ توڑ ایکشن

کراچی: اینٹی انکروچمنٹ فورس کا ہائی پروفائل لینڈ گریبرز کے خلاف تابڑ توڑ ایکشن جاری ہے اور شہر قائد میں سرکاری زمینوں پر قبضے میں ملوث ملزمان کے خلاف کئی مقدمات درج کر لئے گئے ہیں۔ اینٹی انکروچمنٹ سیل کے مطابق اینٹی انکروزچمنٹ زون ون اور زون ٹو میں تین مقدمات درج کیے گئے جن میں حضوربخش کلہوڑ، علی حسن بروہی اور دیگر کو نامزد کیا گیا۔ اس حوالے سے سرکاری زمینوں پر قبضے کے الزام میں تین ملزمان گرفتار ہیں جبکہ حضور بخش کلہوڑ، علی حسن بروہی، عبدالکریم عرف سسٹم مفرور ہیں۔ اس کے علاوہ انیس راجپر، دلبر جمالی، اصغر، عبدالوحید، لاہوتی گبول، محرم راجپر ح، یدر راجپر عرف سجاد حیدر راجپر اور طابق بھی مفرور ہیں۔ مختیار کار منگھوپیر اور گلزار ہجری کی مدعیت میں مقدمے درج کیے گئے ہیں۔ ملزمان پر 24 ایکڑ سرکاری اراضی پر قبضے کا الزام ہے۔ اینٹی انکروچمنٹ سیل کا کہنا ہے کہ کراچی کی اسکیم 33 اور ویسٹ زون کی سرکاری زمینوں پر ملزمان قابض ہیں، اور ملزمان سرکاری ارضی پر باونڈری وال کرکے فروخت کرتے تھے۔ اینٹی انکروچمنٹ مفرور ملزمان کی گرفتاریوں کے لیے چھاپے مار رہی ہے

ادھر ضلع شرقی میں سرکاری اراضی پر لینڈ مافیا کے قبضے کے حوالے سے پولیس نے مختیار کار کی مدعیت میں لینڈ مافیا سرغنہ لاہوتی گبول ، محرم راجپر، برکت عباسی، داٶد بلوچ اور دیگر کے خلاف مقدمہ درج کرلیا ہے۔ ایف آئی آر نمبر 3/2020 مختیار کار گلزار ہجری عبدالقیوم کی مدعیت میں درج کی گئی جس کے مطابق ملزمان نے سپرہاٸی وے جمالی پل کے قریب 7 ایکڑ سرکاری اراضی پر قبضہ کیا اور پلاٹنگ کرکے فروخت کر رہے تھے۔ ایف آئی آر کے مطابق ملزمان کو نوٹس بھی بھیجا گیا جسے لینے سے انکار کر دیا گیا، جس کے بعد کراچی:سرکاری اراضی پر قبضے کے حوالے سے نوٹس چسپاں کر دیا گیا تاہم ملزمان کی جانب سے متعلقہ افسران سے کوئی رابطہ نہ کیا گیا، ایف آئی آر میں کہا گیا ہے کہ پولیس نے مقدمہ درج کرکے ملزمان کی تلاش شروع کر دی ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button
Close
Close