Urdu

نومسلم لڑکی آرزو فاطمہ کورونا کا شکار، پولیس نے اسی حالت میں عدالت میں پیش کردیا

کراچی: اپنی پسند سے اسلام قبول کرنے کے بعد شادی کرنیوالی لڑکی آرزو فاطمہ کو بھی کورونا لاحق ہو گیا اور پولیس نے انہیں اسی حالت میں عدالت میں پیش کردیا۔ اس بات کا انکشاف سندھ ہائی کورٹ میں اس وقت ہوا جب ان سے متعلق کیس کا چالان سندھ ہائی کورٹ میں جمع کرایا گیا۔ چالان کے مطابق آرزو کی کورونا رپورٹ 16 نومبر کو موصول ہوئی جس کے مطابق وہ کورونا کے مرض میں مبتلا ہیں جبکہ ملزم اظہر علی کا بھی کورونا ٹیسٹ کرایا گیا جو کہ منفی آیا۔ پولیس کے مطابق آرزو نے بیان میں بتایا کہ اس کی اظہر علی سے طویل عرصہ سے دوستی ہے، اظہر کے ساتھ موٹر سائیکل پر وکیل کے دفتر پہنچی جہاں نکاح ہوا۔ چالان میں درج نکاح خواں کے بیان کے مطابق لڑکی نے عمر 18 سال ہونے سی متعلق دستاویزات پیش کیں۔ چالان میں بتایا گیا ہے کہ ملزم اظہر علی کے خون اور صواب کے نمونے ڈی این اے کیلئے بھجوا دیئے گیے جبکہ پولیس نے مقدمہ سے اغوا کی دفعہ 264-Aخارج کردی۔ اور اب ملزمان کے خلاف چائلڈ میرج ایکٹ کے تحت کارروائی کی جارہی ہے ،

یہ بھی پڑھیں: نومسلم آرزو فاطمہ کی عمر چودہ سے پندرہ سال عمر ہے میڈیکل بورڈ کی رپورٹ سندھ ہائیکورٹ میں پیش
اسلام قبول کرنیوالی آرزو کا شوہر جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button
Close
Close